جمعرات , مارچ 21 2019
Home / پاکستان / تنظیم سازی میں رکاوٹوں پر سول سوسائٹی کو سخت تشویش

تنظیم سازی میں رکاوٹوں پر سول سوسائٹی کو سخت تشویش

کراچی (اسٹاف رپورٹر) سول سوسائٹی، انسانی حقوق، مزدور حقوق کے رہنمائوں نے پی ٹی آئی حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ پاکستان میں انسانی حقوق اور آزادیوں کے حصول میں حائل تمام رکاوٹیں دور کرکے آئین پاکستان میں دیے گئے تمال بنیادی انسانی حقوق یقینی بنائے جائیں۔

کراچی پریس کلب میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مزدور تنظیم پائلر کے سربراہ کرامت علی، سینیئر ٹریڈ یونین سربراہ حیبیب الدین جنیدی، سندھ ہیومین رائیٹس ڈفینڈرس نیٹ ورک کے علی پلھ، پاکستان فشرفوک فورم کے چیئرمین محمد علی شاھ، آئی یوایف کے جنوبی ایشیا کے سربراہ قمرالحسن، ذوالفقار ہالیپوٹو، مزدور رہنما منظور رضی نے اظہار آزادی اور تنظیم سازی میں رکاوٹوں پر اپنی تفتیش کا اظہار کیا۔

انہوں نے اس موقع پر سول سوسائٹی کی جانب سے موجودہ حکومت کو اپنی تجاویز پر مشتمل ایک چارٹر بھی پیش کیا۔

کرامت علی نے ملک میں اظہار آزادی کی صورتحال پر اپنی تشویش کا اظہار کیا اور خصوصا کراچی پریس کلب پر حملے اور صحافیوں کی بڑی تعداد میں بے روزگار کی مذمت کی۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں صرف ایک فیصد مزدور ٹریڈ یونینز میں منظم ہیں جبکہ طلباء تنظیموں پر جنرل ضیا کےمارشل لاکے دور سے پابندی لگی ہوئی ہے اور جہموری حکومتیں بھی ان کو بحال نا کرسکیں.

چارٹر میں حکومت سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ وفاقی حکومت کی جانب سے بین الاقوامی غیر سرکاری تنظیموں کی رجسٹریشن کی شرط کو ختم کرکے ان کو آزادی کے ساتھ کام کرنے کی اجازت ہونی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ اکثربین الاقوامی تنظیمیں انسانی حقوق کے لیے کئی دہائیوں سے کام کررہی ہیں۔

Check Also

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے اسٹار بیٹسمین احمد شہزاد

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز، پی ایس ایل کی نئی چیمپئن

محمد واحد کراچی: کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نئی چیمپئن بن گئی ہے، جس نے یکطرفہ مقابلے …