بدھ , اپریل 24 2019
Home / پاکستان / پھٹی کی قیمت میں غیر معمولی مندی سے کاٹن سیکٹر معاشی بحران کا شکار
روئی کی قیمتوں میں تیزی کا رجحان متوقع

پھٹی کی قیمت میں غیر معمولی مندی سے کاٹن سیکٹر معاشی بحران کا شکار

کراچی(بزنس رپورٹر)بیشتر ٹیکسٹائل ملز کی جانب سے گزشتہ ایک ہفتے سے روئی خریداری معطل ہونے سے کاٹن مارکیٹس ہیجانی کیفیت کا شکار ہیں اورروئی اور پھٹی کی قیمتوں میں غیر معمولی مندی کے باعث کاٹن جنرز اور کاشتکاروں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔چیئرمین کاٹن جنرز فورم احسان الحق نے بتایا کہ سوتی دھاگے کی فروخت میں غیر معمولی کمی کے باعث ملک کے بڑے ٹیکسٹائل گروپس نے گزشتہ ایک ہفتے سے روئی خریداری معطل کر رکھی ہے .

جس کے باعث روئی کی قیمتیں ایک ہفتے کے دوران300روپے فی من مندی کے بعد8ہزار800روپے فی من تک گر گئی ہیں جبکہ روئی کی خرید و فروخت میں بھی ریکارڈ کمی واقع ہونے سے بعض کاٹن جنرزنے پھٹی کی خریداری بھی معطل کر دی ہے جس سے پورا کاٹن سیکٹرگزشتہ ایک ہفتے سے معاشی بحران کی زد میں ہے ۔انہوں نے نے بتایا کہ30نومبر کو ارجنٹائن میں جی20ملکوں کے اجلاس میں چین اور امریکی صدور کے درمیان ہونے والی ملاقات میں اگر انکے درمیان جاری اقتصادی جنگ کے خاتمے بارے کوئی مثبت خبر آئی تو اس سے دنیا بھر میں روئی کی قیمتوں میں تیزی کا رجحان متوقع ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر کی جانب سے پنجاب کی ٹیکسٹائل ملز کو گیس کے نرخ سندھ کے برابر کرنے کی مکمل یقین دہانی کے باوجود اس پر عمل نہ ہونے سے پنجاب بھر کی ٹیکسٹائل ملز کی جانب سے احتجاج سامنے آنا بھی کاٹن مارکیٹس میں مندی کی ایک بڑی وجہ ہے جبکہ یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ پاکستانی ٹیکسٹائل ملز کی جانب سے بیرون ملک سے بھی 30لاکھ بیلز کے لگ بھگ روئی خریداری کے معاہدے کئے گئے ہیں جس کے باعث بھی اندرون ملک روئی اور پھٹی کی قیمتوں میں مندی کا رجحان سامنے آیا ہے۔

Check Also

ذولفقارعلی بھٹو ایک تاریخ ساز شخصیت

ذولفقارعلی بھٹو ایک تاریخ ساز شخصیت

ضحیٰ مرجان ذولفقارعلی بھٹو ایک تاریخ ساز شخصیت ہیں۔ پیپلز پارٹی کے جیالوں کی تاریخ …